امریکا میں مظاہرین نے کرفیو توڑ دیا، ’سیاہ فاموں کے لیے مثالی اقدامات کیے, ٹرمپ

نوائے وقت  |  Jun 03, 2020

 امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ سیاہ فاموں میں بےروزگاری کی کم ترین شرح میرے اقدامات کی مثال ہے، میری انتظامیہ نے سیاہ فام کمیونٹی کے لیے ابراہم لنکن کے بعد سے سب سے زیادہ کام کیا۔تفصیلات کے مطابق امریکی صدر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ کیا کہ ملک میں قدیم سیاہ فام کالج یونیورسٹیوں کی لیے لازمی فنڈنگ اور کرمنل جسٹس ریفارمز میرے دور میں ہوئے۔ان کا کہنا تھا کہ سیاہ فاموں میں بےروزگاری کی کم ترین شرح میرے اقدامات کی مثال ہے۔ امریکی صدر نے صدارتی امیدوارجوبائیڈن پر بھی کڑی تنقید کی۔ ٹرمپ نے کہا کہ جوبائیڈن نے 40سال سے سیاست میں ہونے کے باوجود کچھ نہیں کیا، وہ اب ایسے ڈھونگ کررہا ہے جیسے ہر مسئلے کا حل پتہ ہے۔ٹرمپ نے ٹوئٹ میں کہا کہ جوبائیڈن کو تو مسائل تک کا نہیں پتہ، کمزوری کبھی بھی انتشار پسندوں، لٹیروں اور چوروں کو شکست نہیں دےسکتی، جوبائیڈن ساری زندگی سیاسی طور پر کمزور رہا ہے۔امریکی صدر نے اپنے ایک اور ٹوئٹ میں تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ فیک میڈیا کا انتہاپسندوں کی کارروائیوں اور لوٹ مار کرنے والوں کو نظر انداز کرنا بھی افسوسناک ہے، ایسا لگتا ہے سب مل کر کام کررہے ہیں۔خیال رہے کہ امریکا بھر میں احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ بدستور جاری جاری ہے۔ کئی شہروں میں مظاہرین نے کرفیو توڑ دیا اور سڑکوں پرنکل آئے۔ واشنگٹن ڈی سی، نیویارک، ہیوسٹن، شکاگو اور لاس اینجلس کی سڑکوں پر مظاہرے ہورہے ہیں۔ وائٹ ہاؤس کے باہر بھی گزشتہ روز پولیس تشدد کے بعد آج پھر شہری جمع ہوگئے۔پولیس نے کرفیو پر عمل درآمد کی اپیل کی جبکہ مظاہرین نے ٹرمپ کے خلاف نعرے بازی کی۔ مظاہرین نے مقتول جارج فلوئیڈ سے اظہاریکجتہی اور قاتلوں کو سزا دینے کا مطالبہ کیا۔ واضح رہے کہ سیاہ فام جارج فلوئیڈ کو پولیس اہلکاروں نے 25مئی کو دوران حراست قتل کیا تھا۔ برطانیہ، آسٹریلیا سمیت کئی ملکوں میں احتجاج کا دائرہ پھیل گیا ہے۔ ملک بھرمیں کورونا سے1688افراد جاں بحق، 80 ہزار463 متاثر

ملک بھرمیں کورونا سے1688افراد جاں بحق، 80 ہزار463 متاثر

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More