بھارتی بحریہ نے مودی کو ایک بار پھر “شرمندگی کے دلدل” میں دھکیل دیا

بول نیوز  |  Jan 24, 2022

بھارتی بحریہ کی فوجی پریڈ نے ایک بار پھر وزیراعظم نریندر مودی کے لیے تنقید کے دروازے کھول دئیے ہیں۔

یومِ جمہوریہ کی پریڈ ریہرسل کے دوران بھارتی بحریہ کے جوانوں کو سینئر بھارتی گلوکارہ آشا بھوسلے کے مقبول ترین گیت “خطوبہ” پر رقص کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔

وائرل ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بھارتی بحریہ کا بینڈ مذکورہ بولی وڈ گانے کی دھن بجا رہا ہے۔

ویڈیو پر شدید غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے بھارتی صحافی اجے شکلا نے نریندر مودی اور بھارتی افواج کے سربراہان کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

اجے شکلا نے ویڈیو پر تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ مودی کی حکومت تینوں مسلح افواج کے وقار اور ساکھ کو تباہ کرنے پر تلی ہوئی ہے اور بولی وڈ کا کمینہ پن اس کی جگہ لے رہا ہے۔

انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں مزید لکھا کہ بھارتی بحریہ کا یہ نوٹنکی پن کس قدر شرمناک ہے۔ کیا مسلح افواج کے سربراہان آنکھیں بند کرکے یہ سب تسلیم کرلیں گے۔

This ⁦@narendramodi⁩ Govt appears to be hell bent on destroying the dignity and sobriety of the three services; and replacing it with some bastardised Bollywood culture

How embarrassing this “Navy nautanki” is! Are the service chiefs going to shut their eyes and acquiesce? pic.twitter.com/e3CZFgpgkp

— Ajai Shukla (@ajaishukla) January 21, 2022

اجے شکلا کی ٹوئٹ کے جواب میں ٹوئٹر صارف میراج صدیقی نے لکھا کہ یہ نیول سروسز نہیں بلکہ اکشے کمار کا ٹولہ لگ رہا ہے۔

It seems #AkshayKumar & company NOT the Naval Services 🙀

— Meraj (@merajsiddiqui1) January 21, 2022

امر گپتا نے لکھا کہ سپاہی اور افسران اس حرکے کے لیے مان کیسے گئے؟

How do the soldiers and officers even agree to this buffonery!

— Amar Gupta (@amarg1966) January 21, 2022

جبکہ وکرم سنگھ نے لکھا کہ کوئی تعجب نہیں کہ چین ہماری سرزمین پر قبضہ کیوں کر رہا ہے اور کیوں ہماری سرزمین کے اندر آنے والے ہمارے بچوں کو اغوا کر رہا ہے۔

No wonder China is grabbing our land and abducting our children coming inside our territory 🤦

— Vikram Singh (@vikrami31) January 21, 2022

شیونگ لکھتے ہیں کہ مجھے اپنے کانوں پر یقین نہیں ہو رہا۔

I can't believe my ears😕😕

— Shiwang (@KumarShiwang) January 21, 2022

Square Adsence 300X250
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More