کرتارپور ملاقات: جب انتخاب عالم کے چٹکلے سن کر بشن سنگھ بیدی کھل ُاٹھے

بی بی سی اردو  |  Oct 05, 2022

'لَولی ٹو سی یو' انڈین کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان بشن سنگھ بیدی کو یہ فقرہ سننے کا شدت سے انتظار تھا۔ اس انتظار میں نو برس بیت گئے تھے بالآخراپنے دیرینہ دوستانتخاب عالم کو اپنی نظروں کے سامنے دیکھنے کی ان کی خواہش پوری ہوگئی۔

چار اکتوبر کو ان دونوں دوستوں کو ملنے کا موقعکرتارپور میں مل گیا جسے برصغیر کی تقسیم کے بعد بچھڑے ہوئے اپنوں کے ملنے کا مرکز کہا جانے لگا ہے۔

سرحد کے دونوں پار سے لوگ اپنوں سے ملنے یہاں کا رخ کرتے ہیں اور ان ملاقاتوں میں جذباتی مناظر دیکھنے میں آتے ہیں۔انتخاب عالم اور بشن سنگھ بیدی کی ملاقات بھی ان جذبات سے خالی نہ تھی۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان انتخاب عالم بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے بتاتے ہیں کہ 'یہ ایک جذباتی لمحہ تھا کیونکہ کافی عرصے کے بعد ہم دونوں کا آمنا سامنا ہوا۔ بشن سنگھ بیدی کو اس ملاقات کے لیے ایک دن کا ویزا ملا تھا جو عام طور پر کرتار پور آنے والے انڈین شہریوں کو ملتا ہے تاکہ وہ یہاں آکر پاکستان میں رہنے والے اپنے عزیز واقارب اور دوستوں سےمل سکیں۔'

انتخاب عالم کہتے ہیں: 'بشن سنگھ بیدی پچھلے کچھ عرصے کے دوران کافی بیمار رہے ہیں لیکن چونکہ ڈاکٹرز نے انھیںسفر کی اجازت دے دی تھی لہذا انھوں نے اس ملاقات کا موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیا۔ وہ اس ملاقات کے لیےوھیل چیئر پر آئے تھے۔ جب ہم دونوں کی نظریں ملیں تو میں نے دیکھا کہ بیدی کو اپنی آنکھوں پر یقین ہی نہیں آرہا تھا۔ میں نے انھیں مخاطب کرتے ہوئے کہا: 'لوولی ٹو سی یو اور یہ کہہ کر ہم نے جپھی ڈالی اور ایک دوسرے سے بغلگیر ہوئے۔ اُسوقت دونوں کی آنکھوں میں آنسو تھے۔ اس موقع پر ہم دونوں کے علاوہ سابق ٹیسٹ کرکٹر شفقت رانا اور ہماری فیملیز کے علاوہ کوئی دوسرا موجود نہ تھا۔'

انتخاب عالم کا کہنا ہے کہ 'ہم دونوں کی آخری ملاقات جنوری سنہ 2013 میں کلکتہ کے ایڈن گارڈنز میں ہوئی تھی جب پاکستان اور بھارت کے کپتانوں کو وہاں مدعو کیا گیا تھا اس کے بعد ہم فون اور واٹس ایپ پر باقاعدگی سے رابطے میں رہتے تھے تاہم ڈیڑھ سال قبل بشن سنگھ بیدی فالج کی وجہ سے کافی بیمار ہوگئے اور ان کی دیرینہ خواہش تھی کہ کسی طرح وہ مجھ سے ملاقات کریں۔'

امریکی گلوکار کی نقل پر بیدی ہنس پڑے

انتخاب عالم اور بشن سنگھ بیدی دونوں زبردست حس مزاح رکھتے ہیں۔ اس ملاقات میں انتخاب عالم نے بشن سنگھ بیدی کو چند لطیفے بھی سنائے اور امریکی سنگر لوئی آرمسٹرانگ کی آواز کی نقل کرتے ہوئے گانا بھی سنایا جس پر بشن سنگھ بیدی کی اہلیہ کا کہنا تھا کہ انتخاب بھائی آپ کی بہت تعریف سن رکھی ہےکہ آپ اس گلوکار کی نقل خوب کرلیتے ہیں آج آپ نے بیدی صاحب کو ہنسادیا ہے۔

انتخاب عالم نے کہا کہ 'میں اپنے کریئر میں اسکاٹ لینڈ میں بھی کھیل چکا ہوں وہاں میری ٹیم میں ایک کرکٹر لوئی آرمسٹرانگ کے گانے گایا کرتا تھا میں نے اس کرکٹر سے یہ گانے سیکھے اور پھر میں ان کی نقل کرلیتا تھا۔ جب میں اور بیدی 1971میں ورلڈ الیون کی طرف سے آسٹریلیا کے دورے پر تھے تو اسوقت ویک اینڈ پر کھلاڑیوں کی پارٹی میں مجھ سے لوئی آرمسٹرانگ کی آواز میں گانے کی فرمائش ہوا کرتی تھی۔'

یہ بھی پڑھیے

’اب اگر یہ بھائی بچھڑے تو مطمئن اور خوش زندگی نہیں گزار پائیں گے‘

پاکستان انڈیا کرکٹ مقابلوں کا جنون جس میں صحافی بھی مبتلا ہو جاتے ہیں

کاؤنٹی کرکٹ میں ہزاروں رنز، سینکڑوں وکٹیں لینے والے پاکستانی

Getty Imagesانتخاب عالم نے سرے کی طرف سے کھیلتے ہوئے 629 وکٹیں لینے کے علاوہ پانچ ہزار سے زائد رنز بنائے تھےآپ میرے پیچھے کیوں پڑگئے ہیں؟

انتخاب عالم نے کہا: 'یوں تو میں اور بشن سنگھ بیدی ساٹھ کی دہائی میں کاؤنٹی کرکٹ کھیلنا شروع کرچکے تھے لیکن ہماری دوستی صحیح معنوں میں سنہ 1971میں شروع ہوئی تھی جب انڈیا اور پاکستان کی ٹیمیں انگلینڈ کے دورے پر تھیں۔ انڈین ٹیم کا ایک میچ میری کاؤنٹی سرے سے تھا مجھے یاد ہے میں نے بیدی کی گیندوں پر لگاتار دو چھکے لگائے تو انھوں نے مجھ پر فقرہ کسا کہ آپ میرے ہی پیچھے کیوں پڑگئے ہیں باقی دو سپنرز پرسننا اور چندر شیکھر بھی تو ہیں انھیں کیوں چھکے نہیں مارتے؟

سب سےخاص بات محبت

بشن سنگھ بیدی بیماری کی وجہ سے بہت کم بات کرپاتے ہیں۔ ان کی اہلیہ نے بی بی سی اردو کو بتایا کہ جب بیدی صاحب انتخاب عالم اور شفقت رانا سے مل رہے تھے تو وہ یہ بات خاص طور پر محسوس کر رہی تھیں کہ بیدی صاحب کے چہرے پر ایک عجیب سی خوشی تھی۔

بیدی صاحب کی اہلیہ کا کہنا ہے کہپاکستان سے ان کی گہری وابستگی ہے کیونکہ ان کے والدینکا تعلق پاکستان سے تھا اور مری میں میرے والدکی دکان بھی تھی۔ وہ متعدد بار پاکستان آچکی ہیں اور اپنے والد کا گھر اور دکان دیکھنے پشاور اور مری بھی جاچکی ہیں۔ پاکستان آکر انھیں سب سے اچھی چیز پاکستانیوں کی محبت لگی ہے۔

پتہ نہیں اب کب ملاقات ہو

بشن سنگھ بیدی اور انتخاب عالم نے کرتار پور میں پورا دن ساتھ گزارا اور اپنی دوستی کے یادگار لمحات کو یاد کرکے خوب لطف اٹھایا۔

لیکن بقول انتخاب عالم وہ لمحہ ہم دونوں کے لیے بہت بھاری تھا جب اس راہداری میں ہم ایک دوسرے کو الوداع کہہ کر واپس ہورہے تھے اسوقت بشن سنگھ بیدی بہت جذباتی دکھائی دیے اور کہنے لگے خوشی ہے کہ ہم مل لیے پتہ نہیں اب دوبارہ مل بھی پائیں یا نہیں؟

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More