’’کپتان کی حکومت میں انتظار کی گھڑیاں ختم ‘‘ پاکستانی پڑھیں صبح صبح خوشی کی خبر

روزنامہ اوصاف  |  Aug 07, 2020

اسلام آباد (ویب ڈیسک) ورلڈ بینک کے پچاس کروڑ ڈالر ملکی زرمبادلہ ذخائر کو 20ارب ڈالر کی سطح کے قریب لے گئے۔ کمرشل بینکوں کے ذخائر ریکارڈ 7 ارب ڈالر ہیں۔اسٹیٹ بینک آ ف پاکستان کے مطابق 30 جولائی تک ملکی زرمبادلہ 65 کروڑ ڈالر اضافے سے 19 ارب 56 کروڑ ڈالر ہوگئے ہیں۔ مرکزی بینک کے مطابق عالمی بینک اور دیگر اداروں کی جانب سے رقوم موصول ہونے کے سبب ملکی زرمبادلہ ذخائر میں اضافے ہو اہے۔اسٹیٹ بینک کے ذخائر 56 کروڑ ڈالر اضافے سے 12 ارب 54 کروڑ ڈالر ہوگئے ہیں۔ جبکہ کمرشل بینکوں کے ذخائر 8 کروڑ ڈالر اضافے سے 7 ارب کی سطح عبور کرگئے۔ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ پورے نظام انصاف میں اصلاحات اور تبدیلی آنی چاہیے،میں کسی بھی جماعت میں ہوں میری پہلی وفاداری ملک کے ساتھ ہوگی۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک بیان میں وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے بتایا کہ وزارت سائنس اور ٹیکنالوجی کے اگلے 2پروگرام وزیراعظم کی منظوری سےاس مہینےلانچ کریںگے۔انہوں نے کہاکہپہلا پروگرام میڈیکل انجینئرنگ سے متعلق ہے جبکہ دوسرا پروگرام دو ایکڑ سے بارہ ایکڑ تک کے ہائی ٹیک زرعی فارمز بنانا ہے۔فواد چوہدری نے کہا کہ ہم چاہتےہیں ضلع سیالکوٹ کو گوادر جیسا اسٹیٹس دیا جائے،ہم چاہتے ہیں کہ ضلع سیالکوٹ کی400ملین ڈالر کی برآمدات 2سال میں 2بلین ڈالر پر لےجا ئیں۔وفاقی وزیر نے کہاکہ ہمارا دوسرا پروگرام جدید ترین ٹیکنالوجی سے استفادہ کرتے زرعی فارمز انشاءللہ چھوٹے کاشتکار کا طریقہ کاشت بدلیں گے، چھوٹے کاشتکار اس کے ساتھ ساتھ ہماری زراعت کا سارا ماحول بھی تبدیل کر دیں گے۔انہوں نے کہا کہ ملک میں ایک طبقہ ماہانہ تنخواہ لیتا ہے اس کو لاک ڈاؤن سے زیادہ فرق نہیں پڑتا، جبکہ یومیہ اجرت والے طبقے دار روز کماتے ہیں اور کھاتے ہیں۔وفاقی وزیر نے کہاکہ حکومت کو دہاڑی دار، تنخواہ دار اور تاجروں سب کو سامنے رکھ کر فیصلے کرنے پڑتے ہیں ۔فواد چوہدری کاکہنا تھا کہ میرے خیال میں تو اب اسکول کھول دینے چاہیے، کم فیس والے اسکولوں کے مالی مسائل زیادہ ہوگئے ہیں، میں نے اس سلسلے میں شفقت محمود اور مراد راس کو بھی لکھا ہے کہ اسکول جلد کھولنے چاہیے۔
مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More