ٹڈی دل کے تدارک کیلئے حکومت ہر ممکن اقدامات کرے گی، وزیر اعظم

بول نیوز  |  Jul 10, 2020

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ٹڈی دل کے تدارک کیلئے حکومت ہر ممکن اقدامات کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کا این ایل سی سی کا دورہ کیا جہاں لیفٹیننٹ جنرل معظم اعجاز نے وزیراعظم کو متاثرہ علاقوں میں آپریشن جبکہ مانیٹرنگ، سروے اور کنٹرول سے متعلق اقدامات سے بھی آگاہ کیا گیا۔

بریفنگ میں کہا گیا کہ ٹڈی دل کی افریقہ سے ایران کے راستے اور بھارت سے آنے کی اطلاعات ہیں، ٹڈی دل کے تدارک کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں۔

فخر امام نے بھی وزیر اعظم کو بریفننگ دیتے ہوئے کہا کہ ٹڈی دل کے خاتمے کیلئے 26 ارب روپے درکار ہیں جبکہ جہاز گاڑیاں ،سپرے اور دوسرا ضروری سامان خریدنا ہے۔

 فخر امام نے مزید کہا کہ فصلوں کو بچانے کیلئے وفاقی حکومت 14 ارب، صوبائی حکومتیں 12 ارب دیں گی اور یہ رقم نیشنل ایکشن پلان 2 کا حصہ ہے۔

وزیراعظم نے بر وقت اور بہترین اقدامات پر وفاقی ،صوبائی حکومتوں اور پاک فوج کے کردار کو سراہا جبکہ ٹیکنیکل معاونت فراہم کرنے پر چین، جاپان اور  برطانیہ کے کردار کو سراہا۔

اس موقع پر وزیراعظم نے نیشنل ایکشن پلان کے فیز 2 کی اصولی منظوری دے دی جبکہ فیصلہ کیا گیا کہ متاثرہ کسانوں کو پیکچ کے ذریعے معاوضہ فراہم کیا جائیگا۔

وزیراعظم کا کارکردگی پر سمجھوتہ نہ کرنے کا فیصلہ

 عمران خان نے کہا کہ کووڈ 19 کے ساتھ ٹڈی دل کا حملہ پاکستان کیلئے بڑا چیلنج تھا ، ٹڈی دل کے تدارک کیلئے حکومت ہر ممکن اقدامات کرے گی۔

وزیراعظم عمران خان نے مزید کہا کہ ٹڈی دل کا براہ راست تعلق ملک کی فوڈ سکیورٹی سے ہے،آنے والے ٹڈی دل کے حملے کو روکنے کیلئے قومی شطح پر لائحہ عمل بنایا جائے جبکہ وفاقی اور صوبائی حکومتیں اقدامات کریں تاکہ فصل کو نقصان نہ ہو۔

چیئرمین این ڈی ایم اے اور شہباز گل ، خسرو بختیار، عبدالحفیط شیخ اور عاصم باجوہ، وفاقی وزرا فخر امام،  اسد عمر، شبلی فراز اور آرمی چیف جنرل قمر باجوہ بھی وزیراعظم کے ہمراہ تھے جبکہ چیف سیکرٹری بلوچستان، پنجاب، سندھ اور خیبرپختونخوا کے وزرائے اعلیٰ  بھی ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک ہوئے۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More