سیف الرحمان کی عبوری ضمانت میں 22ستمبر تک توسیع

سماء نیوز  |  Sep 17, 2021

سرمایہ کاری کے نام پر عوام کو لوٹنے کے کیس میں سپریم کورٹ نے بی فور یو کے مالک سیف الرحمان کی ضمانت میں 22 ستمبر تک توسیع کر دی۔

سپریم کورٹ میں بی فور یو کمپنی کے مالک سیف الرحمان کی درخواست ضمانت پر سماعت جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔

دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ نیب نے ملزم کے خلاف رقم وصولی کے شواہد عدالت میں پیش کر دیے۔ نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ بی فور یو غیر رجسٹرڈ کمپنی ہے، پیسہ ذاتی ناموں پر لیا جاتا ہے، ملزم کو سوالنامہ بھی دیا لیکن تسلی بخش جواب نہیں ملا اور ملزم سرمایہ کاروں کی فہرست فراہم نہیں کر رہا۔

جسٹس منصور علی شاہ نے ریمارکس دیے کہ اگر تسلی بخش جواب نہیں مل رہا تو نیب کاروائی آگے بڑھائے جبکہ جسٹس محمد علی مظہر نے ریمارکس دیے کہ لاکھوں لوگوں نے پیسہ لگایا ہے۔

ملزم سیف الرحمان کے وکیل لطیف کھوسہ نے کہا کہ ایس ای سی پی جرمانہ کرچکا ہے جسے چیلنج کر رکھا ہے، سیف الرحمان کے اکاونٹس منجمند ہوچکے ہیں لیکن پھر بھی عدالت میں چھ چھ گھنٹے کے لیے ہر تین دن بعد بلایا جاتا ہے، جس پر جسٹس منصور نے ریمارکس دیے کہ اکاونٹس منجمد ہوچکے ہیں لیکن ان میں آنے والا پیسہ بہت زیادہ ہے۔

ملزم کے وکیل نے کہا کہ نیب اپنی مرضی کی کارروائی کرنا چاہتا ہے۔ جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیے کہ نیب نے تفتیش اپنی مرضی سے کرنی ہے ملزم کی مرضی سے نہیں۔

سماعت کے بعد عدالت نے ملزم کی عبوری ضمانت میں 22ستمبر تک توسیع کر دی۔

بی فور یو کمپنی

ملائیشیا نژاد پاکستانی سیف الرحمان خان نیازی کی کمپنی بی فور یو گلوبل اپنے سرمایہ کاروں کو سالانہ ڈھائی گناہ تک منافع دیتی تھی۔

یہ منافع یقینی ہوتا ہے چاہے معیشت سکڑ ہی کیوں نہ رہی ہو جیسا کہ سال 2020 میں دیکھنے میں آیا جب کرونا وائرس نے بین الاقوامی تجارت کا پہیہ جام کیا۔

ایس ای سی پی نے اسے غیر قانونی قرار دیے کر عوام کو اس میں سرمایہ کاری سے روک دیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More