پاکستان بمقابلہ انگلینڈ: تاخیر کے بعد دوسرے روز کا کھیل شروع، پاکستان کو پانچ وکٹوں کا نقصان

بی بی سی اردو  |  Aug 14, 2020

پاکستان، انگلینڈ
Reuters

انگلینڈ کے خلاف تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے دوسرے ٹیسٹ کے دوسرے دن کا کھیل بارش اور تاخیر کے بعد شروع ہو گیا ہے۔ پاکستان کی پہلی اننگز کی بیٹنگ جاری ہے۔

اب سے کچھ دیر قبل تک پاکستان نے پانچ وکٹوں کے نقصان پر 137 رنز بنائے ہیں۔ کریز پر بابر اعظم اور محمد رضوان موجود ہیں۔

محکمہ موسمیات کے مطابق میچ کے دوسرے دن وقفے وقفے سے بارش کی پیش گوئی بھی ہے۔

ساؤتھمپٹن سے ملنے والی تازہ ترین اطلاعات کے مطابق 0130 بجے کھانے کا وقفہ لے لیا جائے گا۔ اس وقت گراؤنڈ پر گہرے بادل دیکھے جا سکتے ہیں۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

پہلے روز پاکستان کی آدھی ٹیم آؤٹ

پہلے دن کا کھیل بھی بارش کی وجہ سے متاثر ہوا تھا اور دن بھر میں 45 اعشاریہ 4 اوورز کیے جا سکے تھے۔ پہلے دن کے اختتام تک پاکستان کی پہلی اننگز کی بیٹنگ ساؤتھمپٹن میں جاری تھی اور پاکستان نے پانچ وکٹوں کے نقصان پر 126 رنز بنائے ہیں۔

کریز پر بابر اعظم اور محمد رضوان موجود ہیں۔ جیمز اینڈرسن نے دونوں وکٹیں حاصل کیں۔ جبکہ سٹیورٹ براڈ، کرس ووکس اور سیم کرن نے ایک ایک پاکستانی بلے باز کو آؤٹ کیا ہے۔

اوپنر عابد علی اپنی 60 رنز کی باری کے ساتھ نمایاں رہے۔

فواد عالم
Reuters
11 سال بعد اپنی پہلی ٹیسٹ اننگز میں فواد عالم صفر پر آؤٹ ہوگئے

عابد اور اظہر کے درمیان 72 کی شراکت

پاکستان کے کپتان اظہر علی نے سیریز میں دوسری مرتبہ ٹاس جیت کر بلے بازی کا فیصلہ کیا تھا۔ پاکستان کی بیٹنگ کے دوران وقفے وقفے سے وکٹیں گِرتی رہیں اور صرف ایک اچھی شراکت قائم ہوسکی۔

شان مسعود سے پاکستان کو اس ٹیسٹ میچ میں مانچسٹر ٹیسٹ کی پہلی اننگز جیسی کارکردگی کی امید تھی لیکن وہ صرف ایک رن بنا کر آؤٹ ہوگئے۔ انھیں جیمز اینڈرسن نے اپنی اِن سوئنگ پر ایل بی ڈبلیو کیا۔

عابد کے دو کیچ سلپ میں ڈراپ ہوئے اور انھوں مزید کھیلنے کا موقع ملا۔ اس دوران اظہر بھی محتاط بیٹنگ کرتے نظر آئے۔

عابد علی
PA Media

لیکن اظہر علی 20 رنز بنانے کے بعد اینڈرسن کا دوسرا شکار بنے۔ انھوں نے اوپنر عابد علی کے ساتھ 72 رنز کی شراکت قائم کی تھی۔

چائے کے وقفے سے قبل بارش کے باعث امپائرز نے کھیل روک دیا تھا۔

عابد علی نے چھ چوکوں کی مدد سے اپنی نصف سنچری مکمل کی۔ لیکن وہ سیم کرن کی گیند پر سلپ کو کیچ دے بیٹھے۔ وہ آؤٹ ہونے والے تیسرے کھلاڑی تھے۔

یہ بھی پڑھیے

بین سٹوکس پاکستان کے خلاف اگلے دو ٹیسٹ نہیں کھیلیں گے

۔۔۔اور اظہر علی کی جیب بھی خالی تھی

انگلینڈ نے مانچسٹر ٹیسٹ جیت لیا

کیا 24 برس بعد پاکستان انگلینڈ میں ٹیسٹ سیریز جیت پائے گا؟

اسد شفیق کی خراب فارم جاری رہی اور وہ سٹیورٹ براڈ کی گیند پر سلپ پر کیچ آؤٹ ہوئے۔ وہ صرف پانچ رنز بنا سکے۔

11 سال بعد اپنی پہلی ٹیسٹ اننگز میں فواد عالم صفر پر آؤٹ ہوگئے۔ انھیں کرس ووکس نے ایل بی ڈبلیو کیا۔ اس دوران کمنٹیٹرز نے ان کی غیر معمولی تکنیک پر بھی کافی تبصرہ کیا۔ وہ کریز پر محض چار گیندوں کے مہمان رہے۔

پاکستان، انگلینڈ، اظہر ووکس
Reuters
کپتان اظہر علی نے اوپنر عابد علی کے ساتھ 72 رنز کی شراکت قائم کی تھی

پاکستان کو ٹیسٹ سیریز برابر کرنے کا چیلنج درپیش ہے اور اب اس کا مقابلہ انگلش ٹیم اور موسم دونوں سے ہے۔

اس میچ کے بارش سے متاثر ہونے کا شدید خطرہ ہے اور موسم کی پیشگوئی کرنے والے اداروں کے مطابق اگلے سات دن کے دوران ساؤتھمپٹن میں روزانہ بارش کا امکان ہے۔

اس ٹیسٹ میچ کے لیے انگلش ٹیم میں دو تبدیلیاں کی گئی ہیں اور ٹیم کی ریڑھ کی ہڈی سمجھے جانے والے آل راؤنڈر بین سٹوکس اور فاسٹ بولر جوفرا آرچر یہ میچ نہیں کھیل رہے۔

شان اینڈرسن انگلینڈ، پاکستان
Reuters

پہلے کرکٹ ٹیسٹ میں سٹوکس کی کارکردگی خاص نہیں رہی تھی اور فتح کے بعد انگلش کرکٹ بورڈ نے اعلان کیا تھا کہ سٹوکس پاکستان کے خلاف کھیلی جانے والی ٹیسٹ سیریز کے باقی دو میچوں میں اپنی گھریلو وجوہات کی وجہ سے حصہ نہیں لے سکیں گے۔

سٹوکس کی جگہ انگلش ٹیم میں زیک کرالی جبکہ آرچر کی جگہ سیم کرن کو شامل کیا گیا ہے۔

پاکستانی ٹیم میں بھی ایک تبدیلی کی گئی ہے اور بلے بازی کے شعبے کو مضبوط کرتے ہوئے مڈل آرڈر بلے باز فواد عالم کو لیگ سپنر شاداب خان کی جگہ ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔ فواد عالم تقریباً 11 برس کے بعد پاکستان کی جانب سے کسی ٹیسٹ میچ میں میدان میں اتریں گے۔

محمد عباس، بین سٹوکس
Reuters
انگلش ٹیم کی ریڑھ کی ہڈی سمجھے جانے والے آل راؤنڈر بین سٹوکس یہ میچ نہیں کھیل رہے

تین میچوں کی سیریز میں انگلینڈ کو فی الوقت ایک صفر سے برتری حاصل ہے۔ یہ برتری اسے مانچسٹر ٹیسٹ میں فتح کے نتیجے میں حاصل ہوئی تھی۔

اولڈ ٹریفرڈ میں کھیلے گئے اس ٹیسٹ میچ میں انگلینڈ نے دوسری اننگز میں جوس بٹلر اور کرس ووکس کی ذمہ دارانہ بلے بازی کی بدولت تین وکٹوں سے فتح حاصل کی تھی۔

پاکستان نے انگلینڈ کو جیتنے کے لیے 277 رنز کا ہدف دیا تھا جو انگلینڈ نے کھیل کے چوتھے دن سات وکٹوں کے نقصان پر پورا کر لیا۔

میچ کے دوران ایک وقت ایسا آیا کہ انگلینڈ کی نصف ٹیم پویلین لوٹ گئی جبکہ جیت کے لیے ڈیڑھ سو سے زائد رنز درکار تھے۔ تاہم اس کے بعد چھٹی وکٹ کے لیے کرس ووکس اور جوس بٹلر کی طویل شراکت داری انگلینڈ کو جیت کی طرف لے گئی۔ ووکس 84 جبکہ بٹلر 75 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے مگر اس وقت تک دونوں اپنی ٹیم کو فتح کے بہت قریب لے آئے تھے۔

پاکستان کے کپتان اظہر علی نے میچ کے اختتام پر شکست کی بڑی وجہ اس پارٹنرشپ کو قرار دیا تھا۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More