سابقہ کرکٹ بورڈ کے دور میں ملی بھگت سے کروڑوں کا ہیر پھیر

اب تک  |  Jun 01, 2020

اسلام آباد: (30 مئی 2020) کرکٹ کے نام پر عجب کرپشن کی غضب کہانی۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کی دستاویزات نے بھانڈا پھوڑ دیا۔ سابقہ کرکٹ بورڈ کی ملی بھگت سے سرکاری زمین سے کروڑوں روپے اینٹھ لیئے گئے۔ سابق ممبر پی سی بی گورننگ بورڈ کو نوٹس جاری کردیا گیا۔

نیب کے بعد اب پی سی بی بھی ان ایکشن، اکاؤنٹس کی چھان بین کا عمل شروع ، خرد برد پر نوٹسز جاری، رقوم کا حساب طلب کر لیا گیا۔ اسلام آباد کرکٹ ایسوسی ایشن کے سابق صدر، سابق مشیر چئیرمین پی سی بی اور نجم سیٹھی کے قریبی ساتھی شکیل شیخ کو نوٹس جاری۔ ایک کروڑ 44 لاکھ روپے بورڈ سے وصول کیے جانے پر سابق مشیر چیئرمین پی سی بی کو نوٹس جاری کر دیا گیا۔ پی سی بی نے شکیل شیخ سے حساب اور وضاحت طلب کر لی ہے۔

نوٹس میں کہا گیا ہے کہ شکیل شیخ بتائیں انہوں نے بطور مشیر کیا کام کیا ؟ غیر ملکی دورے جو کیے گئے وہ کیوں ضروری تھے ؟ وصول کیے گئے بھاری ٹی اے ڈی اے کا حساب بھی دیں۔ اس کے ساتھ ساتھ اسلام آباد میں واقع ڈائمنڈ کرکٹ گراؤنڈ پر کیے گئے بورڈ اخراجات کے حوالے سے بھی حساب دیا جائے۔

پی سی بی کی دستاویزات کے مطابق، اسلام آباد کے سیکٹر جی ایٹ ٹو میں ڈائمنڈ کرکٹ گراؤنڈ کا کمرشل استعمال بھی کیا جاتا رہا۔ گراؤنڈ فیس کے نام پر کنٹریکٹر نے کروڑوں کمائے اور دوسری جانب گراونڈ کیلئے مختلف مد میں کنٹریکٹر گرانٹ بھی لیتا رہا۔ دستاویزات کے مطابق، کنٹریکٹر نے پاکستان کرکٹ بورڈ اور سی ڈی اے سے کیے گئے معاہدے کی بھی خلاف ورزی کی۔

مزید خبریں

Disclaimer: Urduwire.com is only the source of Urdu Meta News (type of Google News) and display news on “as it is” based from leading Urdu news web based sources. If you are a general user or webmaster, and want to know how it works? Read More